Istakhara Dua For Marriage in English With Translation

Istakhara Dua we usually recites when we confused for taking decision. Commonly we used to recites it for before start work or for marriage decision.

The word ‘Istakhara’ itself means seeking goodness or guidance in Arabic. It is a ritual performed to seek divine intervention and assistance in making a decision, especially when one is faced with a choice that carries a degree of uncertainty.

Istakhara dua has been practiced for centuries and has deep historical roots. Its origins can be traced back to the early Islamic period when Prophet Muhammad introduced it as a way to consult Allah when facing choices and dilemmas.

Read More: Syed ul Astaghfar

Purpose of Istakhara

Istakhara dua is performed in situations where a decision needs to be made but there is confusion or doubt about the right course of action. This could be related to marriage, business, travel, or any other aspect of life.

Istikhara Dua In English(Translation)

“O Allah, verily I seek the better [of either choice] from You, by Your knowledge, and I seek ability from You, by Your power, and I ask You from Your immense bounty. For indeed You have power, and I am powerless; You have knowledge, and I know not; You are the Knower of the unseen realms. O Allah, if You know that this matter is good for me with regard to my religion, my livelihood, and the end of my affair, then decree it for me, facilitate it for me, and grant me blessing in it. And if You know that this matter is not good for me with regard to my religion, my livelihood, and the end of my affair, then turn it away from me and me from it; and decree for me better than it, wherever it may be, and make me content with it.”

Istikhara Dua

Istikhara Dua In Urdu(Translation)

اے اللہ ! بے شک میں تجھ سے تیرے علم کے ساتھ بھلائی طلب کرتا ہوں اور تجھ سے تیری قدرت کے ساتھ طاقت طلب کرتا ہوں اور میں تجھ سے تیرے فضل عظیم کا سوال کرتا ہوں کیوں کہ تو قدرت رکھتا ہے اور میں قدرت نہیں رکھتا، تو جانتا ہے اور میں نہیں جانتا اور تو غیبوں کو خوب جانتا ہے۔ اے اللہ ! اگر تو جانتا ہے کہ بے شک یہ کام (اس کام کا نام لے) میرے لیے میرے دین، میرے معاش اور میرے انجام کار کے لحاظ سے بہتر ہے تو اس کا میرے حق میں فیصلہ کر دے اور اسے میرے لیے آسان کر دے، پھر میرے لیے اس میں برکت ڈال دے اور اگر تو جانتا ہے کہ بے شک یہ کام (اس کام کا نام لے) میرے لیے میرے دین ، میرے معاش اور میرے انجام کار کے لحاظ سے برا ہے تو اسے مجھ سے دور کر دے اور مجھے اس سے دور کر دے اور میرے لیے بھلائی کا فیصلہ کر دے جہاں بھی وہ ہو، پھر مجھے اس پر راضی کر دے۔

Hadith About Istakhara

حضرت جابر بن عبد اللہ رضی اللہ عنہما کا بیان ہے کہ رسول اللہ صل للہ نے ہمیں تمام کاموں میں استخارہ کرنے کی ایسے تعلیم دیتے جیسے قرآن کریم کی کسی سورت کی تعلیم دیتے۔ آپ ملی یم فرماتے : جب تم میں سے کوئی شخص کوئی کام کرنا چاہے تو فرض کے علاوہ دورکعت نماز پڑھے، پھر یہ دعا پڑھے
هذا الأمر ( یہ کام ) کہتے ہوئے اس کام کا نام بھی لے

صیح بخاری، حدیث 1162

Leave a Comment